حادثے میں لانگ مارچ میں شریک دو افراد زخمی

MUST READ

شاپک کیچءِ ڈرانڈیں بوتگینان گون گپ و ترانے ءُ بی ایچ آر او سروک بی بی گلءِ رپورٹ

شاپک کیچءِ ڈرانڈیں بوتگینان گون گپ و ترانے ءُ بی ایچ آر او سروک بی بی گلءِ رپورٹ

اپوزیسیون مرکزگرای پارس چه در سر دارد؟

اپوزیسیون مرکزگرای پارس چه در سر دارد؟

خصومتِ دولتِ ایران با زبان بلوچـی و دلایلِ آن

خصومتِ دولتِ ایران با زبان بلوچـی و دلایلِ آن

شهزانــــتیں صبا دشتیاری نمیران انت

شهزانــــتیں صبا دشتیاری نمیران انت

طرح تقسیم بلوچستان محکوم به شکست است

طرح تقسیم بلوچستان محکوم به شکست است

ماتی زبان – گوس بھاربلوچ

ماتی زبان – گوس بھاربلوچ

آزادی

آزادی

پاکستان عالمی قوانین کی خلاف ورزیوں کا مرتکب ہورہا ہے

پاکستان عالمی قوانین کی خلاف ورزیوں کا مرتکب ہورہا ہے

درماندگی فاشیسم تمامیت خواه پارس

درماندگی فاشیسم تمامیت خواه پارس

پاکستان وایران کا بلوچ قومی جہد کے خلاف ہمیشہ سے ایک قریبی تعاون رہا ہے:حیربیارمری

پاکستان وایران کا بلوچ قومی جہد کے خلاف ہمیشہ سے ایک قریبی تعاون رہا ہے:حیربیارمری

ایرانءِ بلــوچ دژمنیـں واکدارانی پنـــدل

ایرانءِ بلــوچ دژمنیـں واکدارانی پنـــدل

مـاتی زبان ءِ ميـاں استمانـی روچ

مـاتی زبان ءِ ميـاں استمانـی روچ

Baloch geographical importance and internal complexities

Baloch geographical importance and internal complexities

جنگ عــرب و عجم

جنگ عــرب و عجم

ضلع کیچ کے سابق امیر مولوی احتشام الحق اور ان کا بیٹے کے قتل

ضلع کیچ کے سابق امیر مولوی احتشام الحق اور ان کا بیٹے کے قتل

حادثے میں لانگ مارچ میں شریک دو افراد زخمی

2020-03-31 16:38:05
Share on

Saturday, February 08, 2014

صوبہ پنجاب کے ضلع اوکاڑہ میں پولیس حکام کے مطابق ’وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز‘ کے مارچ کے شرکا کو پیش آنے والے حادثے میں دو افراد زخمی ہو گئے۔

’وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز‘ کا کراچی سے اسلام آباد تک پیدل مارچ صوبہ پنجاب کے شہر اوکاڑہ میں سے گزر رہا ہے جہاں رینالہ خورد کے قریب مارچ میں شریک افراد کے مطابق انھیں ایک ٹرک نے ٹکر مار کر کچلنے کی کوشش کی۔

اسی بارے میںدوسری جانب مارچ کی حفاظت پر مامور پولیس کے اہلکاروں میں سے ایک اے ایس آئی نے بتایا کہ یہ ایک حادثہ تھا اور ٹرک بریک فیل ہونے کے نتیجے میں ان افراد سے ٹکرا گیا تھا۔

پولیس اہلکار نے بتایا کہ صوبہ پنجاب میں داخلے کے ساتھ ہی پنجاب پولیس ان کی حفاظت کے لیے انتظامات کر رہی ہے اور ان کے ساتھ ہر وقت ایک پولیس موبائل ٹیم اور ٹریفک پولیس کے اہلکار ہوتے ہیں جو انھیں ایک حفاظتی حصار میں لے کر چلتے ہیں۔

مارچ کی قیادت کرنے والے وائس فار مسنگ بلوچ پرسنز کے ماما قدیر نے بتایا کہ’ایک ٹرک نے انھیں اور مارچ میں شریک افراد کو ٹکر مار کر کچلنے کی کوشش کی جس کے نتیجے میں انھیں اور دو اور افراد کو چوٹیں لگیں۔‘

مارچ کے شرکا کا اصرار ہے کہ ان کی سکیورٹی کے لیے انتظامات مناسب نہیں ہیں اور وہ موجودہ انتظامات سے مطمئن نہیں ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ انہیں دھمکیاں مل رہی ہیں اور لوگ انہیں گالیاں دیتے ہیں اور مبینہ طور پر پاگل کہتے ہیں۔

’وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز‘ کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے یہ تصویر جاری کی گئی جو ماما قدیر کی ہے

تھانہ رینالہ خورد کے ایک اہلکار کے مطابق ٹرک ڈرائیور موقع سے فرار ہو گیا جس کی تلاش جاری ہے تاہم اس واقعے کی کوئی ایف آئی آر درج نہیں کی گئی ہے۔

بلوچستان سے اسلام آباد تک لانگ مارچ کے دوسرے مرحلے کا آغاز جمعہ 13 دسمبر 2013 کو کیا گیا تھا جو سندھ سے گزرتا ہوا سنیچر 18 جنوری 2014 کو پنجاب میں داخل ہوا۔

کراچی سے 36 روز کا پیدل سفر کر کے یہ مارچ پنجاب میں داخل ہوا تھا جو آنے والے ہفتے میں لاہور پہنچے گا

Share on
Previous article

Truck hits marchers of Long March, two injured

NEXT article

FRIENDS OF MY NATION

LEAVE A REPLY